شق نمبر 1:تعریفات

اسکالرشپ سے مراد: یونیورسٹی میں طالب علم کی پڑھائی کا خرچہ برداشت کرنا چاہے وہ یونیورسٹی کی طرف سے ہو یا کسی اور طرف سے۔

رعائت سے مراد: وہ مراعات جو طالب علم یونیورسٹی میں داخلہ ہونے کی صورت میں حاصل کرے گا ان قواعد و ضوابط کے مطابق جو یونیورسٹی مقرر کرے گی۔

شق نمبر2:اسکالرشپ کے عمومی قواعد و ضوابط

 یونیورسٹی میں اسکالرشپ کی پڑھائی آٹھ سمسٹرہوگی اور اس دوران طالب علم ایک سمسٹرکا عذر پیش کر سکتاہےاور اگر اس سمسٹر کو ملا کر اسکالرشپ طالب علم کی پڑھائی دس سمسٹر سے زیادہ ہو گئی،توا ن زائدسمسٹروں کا خرچہ وہ طالب علم خودبرداشت کرے گا۔

 اسکالرشپ کی خواہش رکھنے والے طلبہ میں ان کو اختیار کیا جائے گا جو پڑھائی میں اعلی کارکردگی زبان کی مہارت،اور جامعہ یا غیر جامعہ کےاساتذہ سے تزکیہ جات رکھتے ہوں گے۔

 کسی بھی سمسٹر کے دوران پڑھائی میں انقطاع کی صورت میں طالب علم اپنا اسکالرشپ کا حق کھو بیٹھے گا اورجامعہ کی کمیٹی کو مخصو ص جہات سے طے کرکے استثناء کا حق حاصل ہوگا۔

 یہ بھی ضروری ہے کہ طالب علم ہر سمسٹر میں کم از کم 18۔20 پیریڈز کی رجسٹریشن کروائے جب وہ کینسل نہ ہو۔

شق نمبر3:یونیورسٹی کے اسکالرشپ پروگرام کے خاص قواعد وضوابط

 یونیورسٹی کو طالب علم کے محنتی ہونے کا پتہ چلے۔

 طالب علم اسکالرشپ کورس میں کامیابی حاصل کرے۔

 یونیورسٹی کی طرف سے اسکالرشپ پروگرام پالینے کی صورت میں طالب علم اپنے ذمے سونپے گئے پڑھائی سے متعلقہ امور اور مقررہ نظام کی پابندی کرے۔

 یونیورسٹی کی طرف سے کسی طالب علم کے داخلے کی موافقت سے کسی صورت میں ہرگز یہ مراد نہ لیا جائے کہ یونیورسٹی نے اسکالرشپ پروگرام میں موافقت کی ہے۔

شق نمبر4:یونیورسٹی کے علاوہ اسکالرشپ پروگرام سے متعلقہ خاص قواعد

اس میں اسکالرشپ پروگرام کے عمومی قواعد و ضوابط کو ہی دیکھا جائے گا اور ایسے ہی وہ قواعد جنکو اسکالرشپ دینے والے مقرر کریں بشرطیکہ وہ یونیورسٹی کے نظام سے ٹکراتے نہ ہوں۔

 اسکالرشپ مہیا کرنے والا اگر پڑھائی کا خرچہ اٹھانا چاہتا ہے تو وہ تمام سمسٹروں کا کم از کم 50فیصد(نصف)خرچہ اٹھا سکتا ہے۔اور باقی یونیورسٹی برادشت کرے گی۔

شق نمبر5:یونیورسٹی کے علاوہ اسکالرشپ کے خاص مراحل

 اسکالرشپ کی رغبت رکھنے والے طلبہ کے نام و کوائف جمع کرنے کی ذمہ داری یونیورسٹی کی ہوگی۔

 محنتی طالب علم کو مقدم رکھا جائے گا۔

 اسکالرشپ پروگرام کے حصول کی خواہش رکھنے والے طلبہ کی رپورٹ یونیورسٹی تیار کرے گی۔جو درج ذیل معلومات پر مشتمل ہو گی۔

طالب علم کا نام، شہریت، رہائش پذیر ملک، میٹرک یا ایف اے کی ڈگری اور پرسنٹ ایج( فیصد) یونیورسٹی میں اس کی پرسنٹ ایجج (فیصد)اگر وہ محنتی طلبہ میں سے نہیں تو، تاکہ رپورٹ تیار کرکے اسکالرشپ دینے والی جہات کو پیش کی جاسکے۔

 اسکالرشپ دینے والی طرف کو حق حاصل ہے کہ وہ طالب علم کی کارکردگی اور یونیورسٹی میں حصول تعلیم کے شوق کے بارے پوچھ سکے۔

 ہر سمسٹر کے آخر میں طالب علم کی اس سمسٹر کے دوران پڑھائی کی رپورٹ اسکالرشپ دینے والی جہات کو دینے کی یونیورسٹی پابند ہو گی۔

شق نمبر6:

اسکالرشپ طلبہ کے علاوہ دوسرے طلبہ کےلئے خاص پیکجز جب طالب علم کے پاس ایک سے زیادہ پیکجز پانے کی صلاحیت ہوجائے گی تو وہ ان پیکجز کو پا سکے گا، بشرطیکہ کے ان کا مجموعہ 75 فیصد سے زائد ہو۔

شق نمبر7:یونیورسٹی کے رعائتی پیکجز درج ذیل ہیں

1. قرآن مجید کے حفاط کےلئے رعائتی پیکج:در ج ذیل ضوابط کے مطابق حافظ قرآن طالب علم پڑھائی کی 50 فیصد فیس کی بچت کا مستحق ٹھرے گا۔

 حفظ قرآن کی سند پیش کرے۔

 اسکالرشپ کے عمومی قواعد وضوابط سوائے شق ’’ا‘‘ اور ’’ج‘‘ کے۔

2. پوزیشن ہولڈر طلبہ کےلئے رعائت پیکجز، اور اس کی حد بندی یہ کہ فیس کا زیادہ سے زیادہ 35 فیصد ہوگا۔

پوزیشن لینے کی صورت میں رعائت پیکجز کی تحدید انتظامیہ کرے گی اور اسکی شروط درج ذیل ہیں:

 طالب علم کا جی پی اے(G.P.A) 4.5 یا اس سے زیادہ ہو۔اور اس حد سے نیچے آنے کی صورت میں رعائت پیکج ختم کردیاجائےگا۔

 طالب علم نے اپنے آخری سمسٹر میں13 پریڈز سے کم کی رجسٹریشن نہ کی ہو۔

 طالب علم سابقہ دونوں شرطوں کے پورا ہونے کی صورت میں رعائت پیکج کے حصول کےلئے درخواست دے۔

 اتنا جی پی اے(G.P.A)آنے کے بعد وہ رعائت پیکج کو آنے والے سمسٹرمیں حاصل کرسکے گا۔

3. سگے بہن ،بھائی (کے داخلے پر)رعائت پیکج کی تحدید درج ذیل کے مطابق ہوگی۔

 15 فیصد پہلے بہن یا بھائی کے داخلے کے وقت۔

 25 فیصد دوسرے بہن یا بھائی کے داخلے کے وقت۔

 50 فیصد تیسرے بہن یا بھائی کے داخلے کے وقت۔

 100 فیصد چوتھے بہن یابھائی کے داخلے کے وقت۔

اور یہ رعائت سب سے پہلے داخل ہونے والے (بہن یا بھائی) کے لئے اورپھر اسی طرح بالترتیب۔

4. میاں بیوی (کے داخلے پر) ان میں سے ہر ایک کےلئے بچت پیکج 25 فیصد ہوگا۔